PDA

View Full Version : Sahaba-e-Karam (AlaiheRidwan) ki Namaz aur Zayart-e-Mustafa (SAW) ka Huseen Manzar



Administrator
04-29-2009, 01:00 PM
Sahaba-e-Karam (AlaiheRidwan) ki Namaz aur Zayart-e-Mustafa (sallalahu alaihe wassalam) ka Huseen Manzar

حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اپنے مرضِ وصال میں جب تین دن تک حجرۂ مبارک سے باہر تشریف نہ لائے تو وہ نگاہیں جو روزانہ دیدار مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے شرفِ دلنوازسے مشرف ہوا کرتی تھیں آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ایک جھلک دیکھنے کو ترس گئیں۔ جان نثاران مصطفیٰ سراپا انتظار تھے کہ کب ہمیں محبوب کا دیدار نصیب ہوتا ہے۔ بالآخر وہ مبارک و مسعود لمحہ ایک دن حالتِ نماز میں انہیں نصیب ہوگیا۔

حضرت انس رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ ایامِ وصال میں جب نماز کی امامت کے فرائض سیدنا صدیق اکبر رضی اللہ عنہ کے سپرد تھے، پیر کے روز تمام صحابہ کرام رضی اللہ عنھم صدیق اکبر رضی اللہ عنہ کی اقتدا میں حسب معمول باجماعت نماز ادا کر رہے تھے کہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے قدرے افاقہ محسوس کیا۔ آگے روایت کے الفاظ ہیں :

فکشف النبی صلي الله عليه وآله وسلم ستر الحجرة، ينظرإلينا و هو قائمٌ، کأن وجهه ورقة مصحف، ثم تبسم.

بخاری، الصحيح، 1 : 240، کتاب الجماعة والامامة، رقم : 2648
مسلم، الصحيح، 1 : 315، کتاب الصلوة، رقم : 3419
ابن ماجه، السنن، 1 : 519، کتاب الجنائز، رقم : 41664
احمد بن حنبل، 3 : 5163
بيهقی، السنن الکبریٰ، 3 : 75، رقم : 64825
ابن حبان، الصحيح، 15 : 296، رقم : 76875
ابوعوانه، المسند، 1 : 446، رقم : 81650
نسائی، السنن الکبریٰ، 4 : 2261 رقم : 97107
عبدالرزاق، المصنف، 5 : 433، رقم
حميدی، المسند، 2 : 501، رقم : 111188
عبد بن حمید، المسند، 1 : 352، رقم : 121163
ابويعلی، المسند، 6 : 250، رقم : 3548

’’آپ نے اپنے حجرۂ مبارک کا پردہ اٹھا کر کھڑے کھڑے ہمیں دیکھنا شروع فرمایا۔ گویا آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا چہرۂ انور قرآن کا ورق ہو، پھر مسکرائے۔‘‘

حضرت انس رضی اللہ عنہ اپنی کیفیت بیان کرتے ہوئے فرماتے ہیں :

فهممنا أن نفتتن من الفرح برؤية النبی صلي الله عليه وآله وسلم، فنکص أبوبکر علی عقبيه ليصل الصف، وظن أن النبی صلي الله عليه وآله وسلم خارج إلی الصلوٰة.

بخاری، الصحيح، 1 : 240، کتاب الجماعة والامامة، رقم : 2468
بيهقی، السنن الکبریٰ، 3 : 75، رقم : 34825
عبدالرزاق، المصنف، 5 : 4433
احمد بن حنبل، المسند، 3 : 5194
عبد بن حمید، المسند، 1 : 302، رقم : 1163

’’حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے دیدار کی خوشی میں قریب تھا کہ ہم لوگ نماز چھوڑ بیٹھتے۔ پھر حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ اپنی ایڑیوں پر پیچھے پلٹے تاکہ صف میں شامل ہوجائیں اور انہوں نے یہ سمجھا کہ حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نماز کے لیے باہر تشریف لانے والے ہیں۔‘‘

ان پر کیف لمحات کی منظر کشی روایت میں یوں کی گئی ہے :

فلما وضح وجه النبی صلي الله عليه وآله وسلم ما نظرنا منظرا کان أعجب إلينا من وجه النبی صلي الله عليه وآله وسلم حين وضح لنا.

بخاری، الصحيح، 1 : 241، کتاب الجماعة والامامة، رقم : 2649
مسلم، الصحيح، 1 : 315، کتاب الصلاة، رقم : 3419
ابن خزيمه، الصحيح، 2 : 372، رقم : 41488
ابوعوانه، المسند، 1 : 446، رقم : 51652
بيهقی، سنن الکبریٰ، 3 : 74، رقم : 64824
احمد بن حنبل، المسند، 3 : 7211
ابو يعلی، المسند، 7 : 25، رقم : 2439

’’جب (پردہ ہٹا اور) آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا چہرۂ انور سامنے آیا تو یہ اتنا حسین اور دلکش منظر تھا کہ ہم نے پہلے کبھی ایسا منظر نہیں دیکھا تھا۔‘‘

مسلم شریف میں فھممنا ان نفتتن کی جگہ یہ الفاظ منقول ہیں :

فبهتنا و نحن فی الصلوة، من فرح بخروج النبی صلي الله عليه وآله وسلم.

مسلم، الصحيح، 1 : 315، کتاب الصلوة، رقم : 419

’’ہم دورانِ نماز آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے باہر تشریف لانے کی خوشی میں حیرت زدہ ہو گئے (یعنی نماز کی طرف توجہ نہ رہی)۔‘‘

علامہ اقبال نے حالتِ نماز میں حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے عاشقِ زار حضرت بلال رضی اللہ عنہ کے حوالے سے دیدارِ محبوب صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے منظر کی کیا خوبصورت لفظی تصویر کشی کی ہے :

ادائے دید سراپا نیاز تھی تیری
کسی کو دیکھتے رہنا نماز تھی تیری

کم و بیش یہی حالت حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے ہر صحابی رضی اللہ عنہ کی تھی۔ شارحینِ حدیث نے فھممنا ان نفتتن من الفرح برؤیۃ النبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا معنی اپنے اپنے ذوق کے مطابق کیا ہے۔

1۔ امام قسطلانی رحمۃ اﷲ علیہ لکھتے ہیں :

فهممنا أی قصدنا أن نفتتن بأن نخرج من الصلوة.

قسطلانی، ارشاد الساری، 2 : 44

’’پس قریب تھا یعنی ہم نے ارادہ کر لیا کہ (دیدار کی خاطر) نماز چھوڑ دیں۔‘‘

2۔ لامع الدراری میں ہے :

و کانوا مترصدين إلی حجرته، فلما أحسوا برفع الستر التفتوا إليه بوجوههم.

گنگوهي، لامع الدراری علی الجامع البخاری، 3 : 150

’’تمام صحابہ کرام رضی اللہ عنھم کی توجہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے حجرہ مبارک کی طرف مرکوز تھی، جب انہوں نے پردے کا سرکنا محسوس کیا تو تمام نے اپنے چہرے حجرۂ انور کی طرف کر لئے۔‘‘

3۔ مولانا وحید الزماں حیدر آبادی ترجمہ کرتے ہوئے لکھتے ہیں :

فهممنا أن نفتتن من الفرح برؤية النبی صلي الله عليه وآله وسلم.

وحيد الزمان، ترجمة البخاری، 1 : 349

’’آنحضرت صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے دیدار سے ہم کو اتنی خوشی ہوئی کہ ہم خوشی کے مارے نماز توڑنے ہی کو تھے کہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے پردہ نیچے ڈال دیا۔‘‘

امام ترمذی رحمۃ اﷲ علیہ کی روایت کے یہ الفاظ ہیں :

فکاد الناس ان يضطربوا فأشار الناس ان اثبتوا.

ترمذی، الشمائل المحمديه، 1 : 327، رقم : 386

’’قریب تھا کہ لوگوں میں اضطراب پیدا ہو جاتا، آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اشارہ فرمایا کہ اپنی اپنی جگہ کھڑے رہو۔‘‘

شیخ ابراہیم بیجوری رحمۃ اﷲ علیہ صحابہ کرام رضی اللہ عنھم کے اضطراب کا ذکر کرتے ہوئے فرماتے ہیں :

فقرب الناس أن يتحرکوا من کمال فرحهم لظنهم شفاءه صلی الله عليه وآله وسلم حتی أرادوا أن يقطعوا الصلوة لإعتقادهم خروجه صلی الله عليه وآله وسلم ليصلی بهم، و أرادوا أن يخلوا له الطريق إلی المحراب و هاج بعضهم فی بعض من شدة الفرح.

بيجوری، المواهب اللدنيه علی الشمائل المحمديه : 194

صحابہ کرام رضی اللہ عنھم آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے شفایاب ہونے کی خوشی کے خیال سے متحرک ہونے کے قریب تھے حتیٰ کہ انہوں نے نماز توڑنے کا ارادہ کر لیا اور سمجھے کہ شاید ہمارے آقا صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ہمیں نماز پڑھانے کے لیے باہر تشریف لا رہے ہیں، لہٰذا انہوں نے محراب تک کا راستہ خالی کرنے کا ارادہ کیا جبکہ بعض صحابہ کرام رضی اللہ عنھم خوشی کی وجہ سے کودنے لگے۔

امام بخاری نے باب الالتفات فی الصلوۃ کے تحت اور دیگر محدثین کرام نے صحابہ کرام رضی اللہ عنھم کی یہ والہانہ کیفیت حضرت انس رضی اللہ عنہ سے ان الفاظ میں بیان کی ہے :

و هَمَّ المسلمون أن يفتتنوا فی صلوٰتهم، فأشار إليهم : أتموا صلاتکم.

بخاری، الصحيح، 1 : 262، کتاب صفة الصلاة، رقم : 2721
ابن حبان، الصحيح، 14 : 587، رقم : 36620
ابن خزيمه، الصحيح، 3 : 75، رقم : 41650
ابن سعد، الطبقات الکبریٰ، 2 : 5217
طبری، التاريخ، 2 : 231

’’مسلمانوں نے نماز ترک کرنے کا ارادہ کر لیا تھا مگر آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے انہیں نماز کو پورا کرنے کا حکم دیا۔‘‘

Imran Attari
04-29-2009, 04:41 PM
:sub kya aqeedah tha Sahaba e Karam Alaihe Ridhwan ka aur inn Ahadees say Maslik e Ala Hazrat Ahl e Sunnat Wa Jamaat ki Haqaaniyat Rooz e Roshan ki tarha sabit hoo chuki hai.

Owais021
04-30-2009, 11:03 AM
:sub kya aqeedah tha Sahaba e Karam Alaihe Ridhwan ka aur inn Ahadees say Maslik e Ala Hazrat Ahl e Sunnat Wa Jamaat ki Haqaaniyat Rooz e Roshan ki tarha sabit hoo chuki hai.

Agree Imran Bhai Bilkul Sahi baat ki hai app ne per kya karain Aqal kahan say lain inn Angraiz ky Cheelon Mein.

Yousuf786
05-01-2009, 06:50 AM
:ja

siddiqui_rose82
05-01-2009, 11:56 PM
:ja

Veer
05-03-2009, 03:58 PM
:ja

Nadeem
05-09-2009, 06:57 AM
:sub kash iss wahabi ko yahi ahadith par kar Shaan-e-Mustafa :saw samajh mein aa jai

Attari1980
05-09-2009, 09:21 AM
:sub

fiqreraza
05-10-2009, 06:09 AM
:sub

Jawad2006
05-11-2009, 12:20 PM
nice sharing :ja

Qasim Azhar
05-12-2009, 05:06 AM
SubhanAllah very nice sharing Admin Bhai... JazakAllah Khair

Rizwan Muneer
05-12-2009, 05:29 AM
:ja

Umer Saleem
05-12-2009, 06:17 PM
:ja

noman52
06-01-2009, 05:54 AM
:ja

talib_ilm
08-13-2009, 07:25 AM
SubhanAllah Great Sharing... Ya Allah Humein bhi Sahaba-e-Karaam Jaisa Ishq-e-Rasool :saw ata farma Ameen

Qadri
08-18-2009, 08:38 PM
:ja

malang009
09-06-2009, 04:29 PM
:ja

Sohaib123
09-23-2009, 12:55 PM
:ja

shehzad attari
09-28-2009, 09:10 AM
لعنت ہے دیوبندی جاہل مولوی اسماعیل دہلوی پر جس نے تقویۃالایمان میں یہ بکواس لکھا کہ نماز میں حضور کی طرف خیال کرنے اپنے بیل اور گدھے کے خیال میں ڈوب جانے سے بد تر ہے۔
اور لعنت ہے اس کے ماننے والوں پر بھی۔
ان گستاخوں کو یہ حدیثیں نظر نہیں آتی کیا۔

Ehtishaam
09-29-2009, 10:46 PM
:ja

Hammad Ansari
10-05-2009, 10:40 AM
MashaAllah buhat nice sharing hai.

Sanaullah
10-06-2009, 04:49 AM
:bis
Hayrat ki baat hay aap nay NABI(SAW) ka wisaal maan lya wah :subkya hay keh such khud hi moonh say nikal jata hay na.

Faisal Qadri
10-06-2009, 12:23 PM
:bis
Hayrat ki baat hay aap nay NABI(SAW) ka wisaal maan lya wah :subkya hay keh such khud hi moonh say nikal jata hay na.


بے شک ہم نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کا وصال مبارک مانتے ہیں لیکن جیسا آپ مانتے ہیں ویسا نہیں۔۔۔ جس طرح آپ کے گمراہ مولوی اسماعیل دہلوی نے لکھا کہ نبی کریم مر کر مٹی میں مل گئے۔
بلکہ ہم تو مانتے ہیں کہ بے شک ہمارے پیارے آقا صلی اللہ علیہ وسلم وصال فرما گئے لیکن اللہ تعالیٰ کے حکم سے انبیاء اپنے قبور میں زندہ ہیں جیسا کہ بے شمار احادیث سے ثابت ہے۔
مزید معلومات کیلئے یہ تھریڈ پڑھ لیں

http://www.irshad-ul-islam.com/showthread.php?t=1172&highlight=zinda

Haroon12
10-23-2009, 11:06 PM
:ja

Tariq Raza
10-25-2009, 08:21 AM
:ja

ashfaq1
10-31-2009, 11:34 AM
:ja

Kamran22
11-02-2009, 07:19 PM
:ja

Pakistani
11-05-2009, 08:23 AM
:ja

yasir456
11-07-2009, 07:16 PM
بے شک ہم نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کا وصال مبارک مانتے ہیں لیکن جیسا آپ مانتے ہیں ویسا نہیں۔۔۔ جس طرح آپ کے گمراہ مولوی اسماعیل دہلوی نے لکھا کہ نبی کریم مر کر مٹی میں مل گئے۔
بلکہ ہم تو مانتے ہیں کہ بے شک ہمارے پیارے آقا صلی اللہ علیہ وسلم وصال فرما گئے لیکن اللہ تعالیٰ کے حکم سے انبیاء اپنے قبور میں زندہ ہیں جیسا کہ بے شمار احادیث سے ثابت ہے۔
مزید معلومات کیلئے یہ تھریڈ پڑھ لیں

http://www.irshad-ul-islam.com/showthread.php?t=1172&highlight=zinda

:ja good answer

farukh ali
11-09-2009, 05:28 PM
:ja

Blank_Heart
11-29-2009, 06:29 AM
JazakAllah Kheir

Waqar Ali
12-04-2009, 08:57 AM
:ja

kamirafiq2009
03-19-2010, 02:02 PM
JazakAllah Kheir

iqbalkuwait
03-20-2010, 11:47 PM
:bis
http://i42.tinypic.com/1opua0.jpg
http://i47.tinypic.com/rwusk0.gif

Ramzan Malik
04-22-2010, 05:52 AM
JazakAllah Kheir

iqbalkuwait
04-22-2010, 10:44 PM
http://img32.imageshack.us/img32/5594/image001rl.gif

Abdul Basit
05-04-2010, 02:22 PM
:ja

Attari1980
05-12-2010, 01:49 PM
http://i47.tinypic.com/rwusk0.gif

Hamid321
05-23-2010, 08:12 PM
:ja

Kaleem Raza
05-25-2010, 08:23 PM
:ja :ma

Zafar Qadri
02-06-2011, 07:08 PM
JazakAllah Kheir

imranattari
02-19-2011, 08:30 PM
جزاک اللہ

Ya Mustafa
04-30-2011, 08:11 PM
:sub :ja :ma

Ghulam Ghous
07-06-2014, 09:27 PM
SubhanALLAH kasshh humein bi aisa ishq naseeb ho jai