PDA

View Full Version : خوشا دلے کہ دہندش ولائے آل رسول



Attari1980
08-10-2009, 09:47 AM
ترنم عندلیب قلم برشاخسار مدح اکرم حضور پیر مرشد برحق رضوان علیہ الحق

خوشا دلے کہ دہندش ولائے آل رسول
خوشا سرے کہ کنندش فدائے آل رسول

گناہ بندہ بخش اے خدائے آل رسول
برائے آل رسول از برائے آل رسول

ہزار درج سعادت بر آرداز صدقے
بہائے ہر گہربے بہائے آل رسول

سیہ سپید نہ شک گر رشید مصرش داد
سیہ سپید کہ سازو عطائے آل رسول

اذا رؤوا ذکر اللہ معائنہ بینی
من و خدائے من آنست ادائے آل رسول

خبر دہد زتک لا الہ الا اللہ
فنائے آل رسول و بقائے آل رسول

ہزار مہر پرد در ہوائے او چوہبا
برو ز نے کہ درخشدہ ضیائے آل رسول

نصیب پست نشیناں بلندیست اینجا
تواضع ست در مرتقائے آل رسول

بر آب چرخ بریں و ببیں ستانہ او
گرانجاک و بیا بر سمائے آل رسول

قبائے شہ بگلیم سیاہ خود نخرد
سیہ گلیم بنا شد گدائے آل رسول

دوائے تلخ مخور شہد نوش و مژدہ نیوش
بیا مریض بدار الشفائے آل رسول

ہمیں نہ از سر افسر کہ ہم زسر بر خاست
نشست ہر کہ بفرقش ہمائے آل رسول

بسخر و طعنہ سختی زند بعارض گل
بسنگ صخرہ وزدگر صبائے آل رسول

دہد زباغ منیٰ غنچہائے زر بہ گرہ
دم سوال حیاء و غنائے آل رسول

ز چرخ دکان زر شرقی و مغربی آرند
بدر دمس لمبس کیمیائے آل رسول

جرس بصلصلہ اش آنچہ گفت راہی را
ہماں بسلسلہ آرد درائے آل رسول

رسول داں شوی از نام ادنمی بینی
دو حرف معرفہ در ابتدائے آل رسول

نجد متش بخرد باج و تاج زنگ و فرنگ
سپید بخت سیاہ سرائے آل رسول

اگر شب است و خطر سخت ورہ نمیدانی
ببند چشم و بیا بر قفائے آل رسول

زرہ نہند کلاہ غرور مدعیاں
بجلوہ مدد اے کفش پائے آل رسول

ہزار جامہ سالوس را کتانی دہ
بتاب اے مہ جیب قبائے آل رسول

مرد بمیکدہ کانجا سیاہ کار انند
بیا بخالقہ ٴ نور زائے آل رسول

مرد بمجلس فسق و فجور شیاداں
بیا بانجمن اتقائے آل رسول

مرد بدا مگہ ایں و روغ بافاں ہیچ
بیا بجلوہ گہ دل دلکشائے آل رسول

ازاں بانجمن پاک سبز پوشاں رفت
کہ سبز بود دراں بزم جائے آل رسول

شکست شیشہ بہجر و پری بشیشہ ہنوز
زدل نمیرو دآں جلوہ ہائے آل رسول

شہید عشق نمیرد کہ جان بجاناں داد!
تو مردی ایکہ جدائے زپائے آل رسول

بگو کہ وائے من دوائے مردہ ماندن من
منال ہر زہ کہ ہیہات وائے آل رسول

کہ می برد زمریضاں تلخ کام نیاز
بعہد شہد فروش بقائے آل رسول

صبا سلام اسیران بستہ بال رسان
بطائر ان ہوا و فضائے آل رسول

خطا مکن و لکا پردہ ایست دوری نیست
بگوش میخور داکنوں صدائے آل رسول

مگو کہ دیدہ گری و غبار دیدہ بخند
بکار تست کنوں تو یتائے آل رسول

مپیچ در غم عیارگاں ذنب شعار
اگر ادب نکنند از برائے آل رسول

ہر آنکہ نکث کند نکث بہر نفس و یست
غنی ست حضرت چرخ اعتلائے آل رسول

سپاس کن کہ بیاس و سپاس بد منشاں
نیاز و ناز ندارد ثنائے آل رسول

نہ سگ بشورد نہ شپر بخامشی کاہد
زقدر بد رو ضیائے ذکائے آل رسول

تواضع شہ مسکیں نواز را نازم
کہ ہمچو بندہ کند بوس پائے آل رسول

منم امیر جہانگیر کجکلاہ یعنی
کمینہ بندہ و مسکیں گدائے آل رسول

اگر مثال خلافت و بد فقیرے را
عجب مدار ز فیض و سخائے آل رسول

مگیر خردہ کہ آں کس نہ اہل ایں کارست
کہ داند اہل نمودن عطائے آل رسول

ببیں تفاوت راہ از کجاست تا بکجا
تبار ک اللہ ماؤثنائے آل رسول

مرا زنسبت ملک است امید آنکہ بہ حشر
ندا کنند بیا اے رضا ئے آل رسول