PDA

View Full Version : واہ کیا شوق ہے یہ اے دلِ شیدا تیرا



Administrator
09-01-2009, 12:02 PM
واہ کیا شوق ہے یہ اے دلِ شیدا تیرا
رات دن ان کی گلی میں ہو بسیرا تیرا

شاخ طوبیٰ کی ہے اک شاخ کہا سب نے مجھے
شرفِ نعت نویسی سے یہ خاما تیرا

زلف مشکین محمد سے معطر ہے جہاں
کھل گیا سارا بھرم عنبر سارا تیرا

کعبہ تو قبلہٴ عالم ہے بربِّ کعبہ
اور رخِ پاک نبی قبلہٴ و کعبا تیرا

در اقدس پہ جب آقا کے جبیں میں رکھ دوں
گر ٹھہر جائے تو کیا بگڑے زمانا تیرا

ان کی آمد پہ لحد نور سے بھر جائے گی
ہاں پتہ بھی نہ چلے گا کچھ اندھیرا تیرا

میں اسیر خمِ گیسو شہِ لولاک کا ہوں
مجھ پہ جادو نہ چلے گا کبھی دنیا تیرا

زندگی ہوجا بہ ناموسِ محمد قرباں
کس کو فرصت ہے کرے حل جو معمّا تیرا

تو نے دی صلوا علیہ کی کلیہ رحمت
شکر کس منہ سے کروں بارِ الٰھا تیرا

کھلے ہر گز نہ کبھی بابِ اجابت اس پر
تا وسیلہ نہ شود نامْش منا جاتے را

صدقہ اس نور مجسم کا ہے خورشید فلک
بھیک اس در کی ہے اے چاند اجالا تیرا

معطی الله، نبی قاسم، ارے فکر نہ کر
کون چھینے گا تیرے منہ سے نوالا تیرا

بولا ہاتف کہ ہے اس نعت میں کیا کیف و سرور
قدسیاں وجد میں ہیں سن کے یہ نغما تیرا

یَانَبِیْ اَنْتَ حَبِیْبِیْ ہو مری نعت قبول
لوگ کہ دیں مجھے جاگا ہے نصیبا تیرا

کہتی ہے ملّتِ بیضا کے لہو کی سرخی
رنگ پھیکا نہ ہو، اے مسجدِ اقصا! تیرا

دھڑکنیں نامِ محمد سے جو وابستہ ہوئیں
حافظ، اے قلب! ہے الله تعالا تیرا

نگہ لطف جو تجھ پر شہِ کونین کی ہے
کیا بگاڑے گا بھلا برق زمانا تیرا

Attari1980
09-01-2009, 12:37 PM
:ja