PDA

View Full Version : آیا ہے بلاوا پھر اک بار مدینے کا



Attari1980
11-05-2009, 08:07 PM
آیا ہے بلاوا پھر اک بار مدینے کا

آیا ہے بلاوا پھر اک بار مدینے کا
پھر جاکے میں دیکھوں گا دربار مدینے کا

گلشن سے حسین تر ہے کہسار مدینے کا
جنت سے بھی بڑھ کر ہے گلزار مدینے کا

میں پھول کو چوموں گا اور دھول کو چوموں گا
جس وقت کروں گا میں دیدار مدینے کا

آنکھوں سے لگالوں گا اور دل میں بسالوں گا
سینے میں اتاروں گا میں خار مدینے کا

سینے میں مدینہ ہو اور دل میں مدینہ ہو
آنکھوں میں بھی ہو نقشہ سرکار مدینے کا

لاتی ہے سر بالیں رحمت کی ادا ان کو
جس وقت تڑپتا ہے بیمار مدینے کا

روتے ہیں جو دیوانے بے تاب ہیں مستانے
ان سب کو دکھا دیجئے دربار مدینے کا

روتا ہے جو راتوں کو امت کی محبت میں
وہ شافع محشر ہے سردار مدینے کا

راتوں کو جو روتا ہے خاک پہ سوتا ہے
غمخوار ہے سادہ ہے مختار مدینے کا

قبضے میں دو عالم ہیں پر ہاتھ کا تکیہ ہے
سوتا ہے چٹائی پر سردار مدینے کا

دکھ درد جہاں بھر کے سب دور شہا کرکے
مجھ کو تو بنا لیجئے بیمار مدینے کا

اس در کے بھکاری کی جھولی میں دو عالم ہیں
شاہوں سے بھی بڑھ کر ہے نادار مدینے کا

مقبول جہاں بھر میں ہو دعوت اسلامی
دوں واسطہ اے رب غفار مدینے کا

تقدیر چمک اٹھے قسمت ہی تو کھل جائے
بن جائے جو ادنٰی سگ عطار مدینے کا

sweet madina very lovely
11-06-2009, 12:12 AM
:bis
:saw
:sub :sub :sub
:ma :ma :ma
:ja