PDA

View Full Version : جس طرف دیکھئے گلشن میں بہار آئی ہے



Attari1980
12-21-2009, 10:32 AM
جس طرف دیکھئے گلشن میں بہار آئی ہے

جس طرف دیکھئے گلشن میں بہار آئی ہے
دل مگر دشت مدینہ کا تمنائی ہے

خوشنما پھول گلستاں میں کھلے ہیں لیکن
میرا دل خار مدینہ ہی کا شیدائی ہے

میرے آقا کی عنایت ہے کہ میرے دل میں
گنبد سبز کی تصویر اتر آئی ہے

جب کبھی جس نے بھی پائی ہے جہاں کی نعمت
آپ کے دست کرم ہی سے شہا پائی ہے

آہ ! مجبور پہ یا شاہ مدینہ http://faizeraza.net/forum/images/smilies/pbuh.gif غم کی
چار جانب سے شہا کالی گھٹا چھائی ہے

دے دے یارب غم سلطان مدینہ دیدے
لب پہ رہ رہ کر یہی ایک دعا آئی ہے

جب تڑپ کر دل غمگین نے پکارا آقا
فوراً امداد شہا آپ نے فرمائی ہے

کر دو سیراب دل تشنہ کو جلدی ساقی
شربت دید کا مدت سے تمنائی ہے

گھپ اندھیرا تھا گناہوں کا میں صدقہ جاؤں
تم نے خود آ کے لحد نور سے چمکائی ہے

نزع میں، قبر میں میزان عمل پر، پل پر
ہر جگہ آپ کی نسبت ہی تو کام آئی ہے

سنتیں شاہ مدینہ کی تو اپنائے جا
دونوں عالم کی فلاں اس میں مرے بھائی ہے

مال و دولت کی ہوس دل سے مٹا دے یارب
سوز سرکار کا عطار تمنائی ہے