PDA

View Full Version : اپنا غم یا شہ انبیاء دیجئے



Attari1980
12-21-2009, 11:42 AM
اپنا غم یا شہ انبیاء دیجئے


اپنا غم یا شہ انبیاء دیجئے
چشم نم یاحبیب خدا دیجئے

چاک سینہ شہ دوسرا دیجئے
قلب بے چین یا مصطفٰے دیجئے

مجھ کو آقا مدینے بلا لیجئے
اور مہمان اپنا بنا لیجئے
در پہ بلوا کے جلوہ دیکھا دیجئے
میرا سینہ مدینہ بنا دیجئے

ہے تمنا میری یاحبیب خدا
عشق میں کاش روتا رہوں میں سدا
از طفیل بلال و اویس و رضا
آنسوؤں کا خزانہ شہا دیجئے

سوز الفت کے دل میں جلائے دئیے
یاد طیبہ میں جو جا رہے ہیں جئے
حاضری کی تمنا میں روتے ہیں جو
ان کو میٹھا مدینہ دیکھا دیجئے

مجھ کو احباب تنہا چلے چھوڑ کر
جلد لیجئے خبر آمنہ کے پسر
گھپ اندھیرا ہے یا شاہ جن و بشر
نور سے اب لحد جگمگا دیجئے

ہے گناہوں کا انبار سلطان دیں
نیکیاں میرے پلے میں کچھ بھی نہیں
چاک ہو جائے پردہ نہ میرا کہیں
اب خدا سے شہا بخشوا دیجئے

کاش ! تبلیغ کرتا پھروں جا بجا
سنتیں عام کرتا رہوں جا بجا
گر ستم ہو اسے بھی سہوں جا بجا
ایسی ہمت حبیب خدا صلی اللہ علیہ وسلم دیجئے

پھر عرب کی حسین وادیاں دیکھنے
سبز گنبد کی ہریالیاں دیکھنے
روضہ ء پاک کی جالیاں دیکھنے
اذن عطار کو مصطفٰے دیجئے

ہے تمنائے عطار اندوہ گیں
توڑئیے گا نہ دل آپ ماہ مبین
بس بقیع مبارک میں دوگز زمیں
اس کو بہر شہ کربلا دیجئے