PDA

View Full Version : افسوس وقت رخصت نزدیک آرھا ہے



Attari1980
02-24-2010, 09:58 AM
افسوس وقت رخصت نزدیک آرھا ہے

افسوس وقت رخصت نزدیک آرہا ہے
اک ہوک اٹھ رہی ہے دل بیٹھا جارہا ہے

دل میں خوسی تھی کیسی جب میں چلاتھا گھر سے
دل غم کے گہرے دریا میں ڈوبا جارہا ہے

ہے فرقت مدینہ سے چاک چاک سینہ
ابر سیاہ غم کا اب دل پر چھا رہا ہے

آنکھ اشکبار ہے اب دل بےقرار ہے اب
دل کو جدائی کا غم اب خوں رلارہا ہے

کیوں سبز سبز گنبد ہر ہوگیا نہ قرباں
اے زائر مدینہ تو بھول کھارہا ہے

افسوس! چند گھڑیاں طیبہ کی رہ گئی ہیں
دل میں جدائی کا گم طوفاں مچا رہا ہے

کچھ بھی نہ کر سکاہوں ہائے ادب یہاں کا
یہ غم مرے کلیجے کو کاٹ کھارہا ہے

اب روح بھی ہے مغموم اور جاں بھی حیراں
بادل غم و الم کا ہر سمت چھارہا ہے

موت آپ کی گلی کی بہتر ہے زندگی سے
ہائے مقدر ان کا در کیوں چھڑا رہا ہے

افسوس چل دیا ہے اب قافلہ ہمارا
ہر ایک غم کا مارا آنسو بہا رہا ہے

دل خون رو رہا ہے آنسو چھلک رہے ہیں
میری نظر سے طیبہ اب چھپتاجارہا ہے

لے لو سلام آخر رخصت مجھے دوآقا صلی اللہ علیہ وسلم
خدمت بجانے دیں کی عطار جارہا ہے