داعش، امریکہ اور اسرائیل کی بغل بچہ تنظیم ہے جس کا مقصد صرف اور صرف اسلام اور مسلمانوں کو نقصان پہنچاناہے





٭ علمائے اہلسنت کے بعد اب مسلمانوں کی عالمی دینی درسگاہ جامعہ الازہر نے بھی داعش کو دہشت گرد تنظیم قرار دے دیا، جامعہ الازہر کے سربراہ شیخ ڈاکٹر احمد الطیب نے کہا کہ داعش یہودیوں کے ہاتھوں اسلام کے خلاف استعمال کیا جانے والا ایک ہتھیار ہے جس کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں۔
واضح رہے کہ داعش نے گزشتہ ماہ یونس علیہ السلام، حصرت شیث علیہ السلام اور دیگر مزارات کو شہید کردیا تھا۔ داعش کا مقصد اﷲ تعالیٰ کے نیک بندوں سے نسبت رکھنے والی چیزوں کو مٹانا اور ان کی بے حرمتی کرنا ہے۔ یہودونصاری کی سرپرستی میں اس تنظیم کو فلسطین، شام، لبنان، عراق، مصر، سعودی عرب، بنگلہ دیش، ہندوستان اور پاکستان میں اپنا نیٹ ورک قائم کرنا ہے۔واضح رہے کہ اس وقت پاکستان کے مختلف شہروں میں داعش کے نام پمفلٹ کی تقسیم شروع ہوچکی ہے۔ اس وطن عزیز پاکستان میں وہابیوں، دیوبندیوں کی تمام کالعدم جماعتیں لشکر طیبہ، جماعۃ الدعوہ، جیش محمد، سپاہ صحابہ، لشکر جھنگوی اور تحریک طالبان پاکستان داعش کے ساتھ ہیں کیونکہ ان سب کے عزائم ایک ہیں، لہذا علمائے اہلسنت بیداری کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایک مسلح جماعت تشکیل دیں۔